محمد حسن عسکری

 

آج مورخہ  5 نومبر جدید اردو کے مایہ ناز ادیب، دانشور اور نقاد محمد حسن عسکری کا یوم ولادت ہے۔ ان کا اصل نام اظہار الحق تھا۔ حسن عسکری 5 نومبر 1919 کو ضلع بلند شہر جنوبی اتر پردیش میں پیدا ہوئے۔ ابتدائی تعلیم مسلم پرائمری اسکول، شکارپور ضلع بلند شہر سے حاصل کی۔ ڈی اے انگلش مڈل اسکول سے مڈل پاس کیا۔ 1936 میں مسلم ہائی اسکول بلند شہر سے میٹرک اور 1938 میں میرٹھ کالج میرٹھ سے انٹر پاس کیا۔ الٰہ آباد یونیورسٹی سے 1940 میں بی اے کیا اور 1942 میں وہیں سے انگریزی میں ایم اے کیا۔ قیام پاکستان سے قبل آل انڈیا ریڈیو میں کام کیا اور بعد ازاں ذاکر حسین دلی کالج میں معلم کی خدمات بھی سرانجام دیں مگر تشکیل پاکستان کے بعد کراچی میں قیام پذیر ہوئے۔ اسلامیہ کالج سے منسلک رہے اور اردو زبان پر خاص توجہ دیتے ہوئے کئی مغربی کتابوں کا ترجمہ کیا جن میں کئی ایک زبانیں انگریزی، روسی، فرانسیسی اور عربی شامل ہیں۔

’’جدیدیت‘‘ ان کی بہترین تصانیف میں شمار کی جاتی ہے۔ دیگر ازیں جزیرے، انسان اور آدمی، ستارہ یا بادبان شامل ہیں۔ جہدِ مسلسل ان کا نصب العین تھا اور قبل از وفات تک ادبی کاموں میں مشغول رہے۔ محمد حسن عسکری نے اپنی ادبی زندگی کا آغاز افسانہ نگاری سے کیا مگر اس کے ساتھ ہی رسالہ ’’ساقی‘‘ میں ان کے کالم ’’جھلکیاں‘‘ کو بڑی مقبولیت حاصل ہوئی۔ اس کالم نے ان کی ادبی بصیرت، علمیت اور منفرد اسلوب تحریر کے دیرپا اثرات چھوڑے۔ افسانوں میں نفسیاتی موضوعات اور ہئیت کے تجربے کے باعث ان کو ابتدائی تجربہ پسند افسانہ نگار کی حیثیت سے بھی جانا جاتا ہے۔ آخری زمانے میں عسکری کا رجحان بیش از بیش تصوف اسلامی اور ادب کی تہذیبی اور اسراری تعبیروں کی طرف ہوگیا تھا اور تفسیر قرآن کا ترجمہ سرانجام دیتے ہوئے 18 جنوری 1978 کو کراچی میں انتقال فرماگئے۔

 


Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter