• اے مصحفی جس روز وہ بت سیر کو آیا
    کھل جائیںگی بت خانے میں اصنام کی آنکھیں
    مصحفی
  • بے طرح اس سے ملاتی ہے تو آنکھیں نرگس
    دیکھیو کیں نہ تری آنکھ میں گل پڑجاوے
    عشق
  • ایسا نہ ہو کہ پیارے دم میں کسی کے آجا
    جو بد نگہ سے دیکھے آنکھیں نکال کھاجا
    فدوی لاہوری
  • گریوں ہی ہے تو واں نہ بولینگے
    اپنی آنکھیں کوئی سیے کیسے
    نظام
  • یاں آنکھیں مندتے دیر نہیں لگتی میری جان
    میں کان کھولے رکھتا ہوں تیرے شتاب ہو
    میر تقی میر
  • جوش پر تھیں صفت ابر بہاری آنکھیں
    بہہ گئیں آنسووں کے ساتھ ہماری آنکھیں
    تعشق
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 61

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter