• روح کی آنکھیں چکا چوند ہوئی جاتی ہیں
    کس کی آہٹ کا مرے کان میں نغمہ چمکا
    امجد اسلام امجد
  • اک نام کی اڑتی خوشبو میں اک خواب سفر میں رہتا ہے
    اک بستی آنکھیں ملتی ہے، اک شہر نظر میں رہتا ہے
    امجد اسلام امجد
  • تھیں یوں ہی قتل عام پر آنکھیں تلی ہوئی
    دل آنکھ اور سرمہ دنبالہ دار نے
    مسرور
  • کیا ڈیٹھ یہ آنکھیں ہیں کہ لڑتی ہیں انھیں سے
    پردوں میں چھپائے ہوئے سب حسن انھیں کا
    شوق قدوائی
  • آنکھیں لڑائیں ان سے کہاری نے بانس کھائے
    اس کا بھی میرے چونڈے پہ ڈولا اوچھل گیا
    جان صاحب
  • نرگس کو تب سے ہرگز دیکھا نہیں ہوں پیارے
    گلشن میں جب سے تونے آنکھیں بتائیاں ہیں
    عشق
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 61

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter