• آرزو خُود اپنے خُوں سے انجمن پرداز ہے
    دل بہر قیمت فروغِ جلوہ سامانی کرے
    امجد اسلام امجد
  • ہر نظر اک خلش میں ڈھلتی ہوئی
    آرزو کروٹیں بدلتی ہوئی
    نبض دوراں
  • یہ ہے آرزو میری شام و سحر
    کہ دارالفنا سے کروں میں سفر
    شمشیر خانی
  • ٹوٹے ہوئے مکاں ہیں مگر چاند سے مکیں
    اس شہرِ آرزو میں اک ایسی گلی بھی ہے
    اختر ‌ہوشیار ‌پوری
  • دمِ مرگ دشوار دی جان اُن نے
    مگر میر کو آرزو تھی کِسو کی
    میر
  • وصل کے دن کی آرزو ہی رہی
    شب نہ آخر ہوئی جدائی کی!
    میر تقی میر
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 21

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter