• آرزو ہے کہ رہوں تیرے در دولت پر
    زندگی بھر میں کروں چوکسی درباں ہوکر
    ہزبر
  • غمِ حیات نے آوارہ کردیا‘ ورنہ!
    تھی آرزو کہ تیرے در پہ صبح و شام کریں
    مجروح
  • ہم خون آرزو کا جو محضر بنائیں گے
    تجھ کو گواہ اے دل مضطر بنائیں گے
    تعشق
  • ہماری آرزو کی طاقتیں اب دیکھنا کوئی
    نظر کے سامنے سارا جمالستان عریاں ہے
    سہا
  • کیا پیر زن نے یہ سن کر قبول
    ہوئی آرزو میری یکسر حصول
    بہار دانش
  • وہ مرتی تھی جوان خوبرو پر
    مٹی تھی آبرو اس اس آرزو پر
    الف لیلہ ذومنظوم
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 21

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter