• کیا آگ کی چنگاریاں سینے میں بھری ہیں
    جو آنسو مری آنکھ سے گرتا ہے شرر ہے
    میر
  • جو عاشق پر تحمل کا جگر ہوجائے خوں سارا
    تو ناداں کی طرح بازار میں آنسو بہاوے کب
    دیوان حافظ ہندی
  • منھ پھیر کے روتے تھے سبھی ظالم بدخو
    لیکن بن کاہل کی نہ تھا آنکھ میں آنسو
    برجیس
  • مژہ پر چڑھ آنسو کیا نٹھ کا سانگ
    بدوں گا نہ میں اس کی یہ بھی کلا
    اظفری
  • تمہاری شکل بھی دھندلاگئی نگاہوں میں
    بھرے ہوں آنکھ میں آنسو تو کیا نظر آئے
    وحیدہ نسیم
  • منا جاتی کا آنسو ڈھل کے اس کے آستانے سے
    ہوا ہے درة التاج سعادت فرق فرقد کا
    محسن
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 29

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter