• آیاجو غیظ میں پسر شیر کردگار
    دیدہ دلیر آنکھیں چھپا کر ہوے فرار
    سجاد راے پوری
  • بچھی تھیں ہر طرف آنکھیں ہی آنکھیں
    کوئی آنسو گرا تھا ، یاد ہوگا
    بشیر بدر
  • پھول سو بھی جائیں تو روشنی نہیں بجھتی
    سبز دُوب کی آنکھیں جاگتی ہیں رستوں پر
    پروین شاکر
  • یوں پھاڑ کے آنکھیں جو ادھر دیکھ رہے ہیں
    تارے تمھیں اے رشک قمر دیکھ رہے ہیں
    الماس درخشاں
  • تری آنکھیں چلتی ہوئی دیکھ لے
    نہ دیکھے ہوں جادو جو چلتے ہوئے
    جلال
  • لو میں آنکھیں بند کیئے لیتی ہوں‘ اب تم رخصت ہو
    دل تو جانے کیا کہتا ہے‘ لیکن دل کا کہنا کیا
    پروین ‌شاکر
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 61

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter