• شیدا بیگم کی یہ دختر تھی، ابھی بطن سے تھی
    وہ قضا کرگئی ، افسوس ہے ، جنت کو گئی
    واجد علی شاہ
  • افسوس سے ان ہاتھوں کے ملنے کے میں صدقے
    کیوں روتے ہو اشک آنکھوں کے ڈھلنے کے میں صدقے
    انیس
  • جب وہ دریا کے کنارے گے مارے افسوس
    آپ صدمے سے ہوئے گور کنارے افسوس
    اوج لکھنوی
  • رستے کی سب بی بیاں نے نیں دیکھیاں بلبلانا
    بچھڑے تو پھر کرینگیاں افسوس بلبل کا
    ہاشمی
  • ولی اس بات کا افسوس ہے مجھ دل منیں دائم
    کہ میری بات کوں خاطر میں لاتے نئیں سو کیا باعث
    ولی
  • درک بے ترک سے ہے صد افسوس
    ترک بے درک سے ہزار آوخ
    شاہ کمال
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 12

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter