• افسوس ہے نہیں تو انصاف دوست ورنہ
    شایان لطف دشمن شائستہ میں غضب کا
    میر
  • فتنہ برداز ، دغا باز ، فسوں گر ،عیار
    ہائے افسوس دل آیا بھی تو آیا کس پر
    گلزارِ داغ
  • میری آنکھیں روتی ہیں ناسخ اسی افسوس میں
    آہ ہم تر ہوں لب آل پیمبر خشک ہوں
    ناسخ
  • درک بے ترک سے ہے صد افسوس
    ترک بے درک سے ہزار آوخ
    شاہ کمال
  • افسوس گلا کاٹ کے مر بھی نہ سکے ہم
    مصروف رہے ہاتھ شب ہجر دعا میں
    داغ
  • سنگ کو آب کریں پل میں ہماری باتیں
    لیکن افسوس یہی ہے کہ کہاں سستے ہو
    قائم
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 12

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter