Shair

شعر

بلبل کی نمط نالۂ و زاری میں ہوں نس دن
افسوس ووگل دے خوش باس نہ آیا

(ولی)

افسوس اے عزیزاں وہ سیم بر نہ آیا
مجھ درد کی خبر سن وہ بے خبر نہ آیا

(ولی)

اس زندگی کے مجھ پہ کئی قرض ہیں مگر
میں جلد لوٹ آؤں گا افسوس مت کرو

(بشیر بدر)

افسوس کیا کروں ماں اجڑیاں یوبیگا بیگی
طاقت تبی رہی نیں اس دُکھ سوں دل جلی کا

(ہاشمی)

کردیے افسوس وہ روزن ہی جاسوسوں نے بند
جن میں کچھ تھوڑی سی تھی آنکھیں لڑانے کی جگہ

(انتخاب رامپور)

افسوس اب کہاں وہ جوانی کہاں وہ دور
پیتے تھے ہم بھی پیر مغاں خم کے خم کبھی

(الماس درخشاں)

First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 12

Poetry

Pinterest Share