• پھر وہی آنسوؤں کی بارش ہے
    پھر وہی دل کی خشک سالی ہے!
    امجداسلام امجد
  • میں بھیگ بھیگ گیا آرزو کی بارش میں
    وہ عکس عکس میں تقسیم چشمِ ترسے ہُوا
    امجد اسلام امجد
  • آگ کیا ہم کو لگائی ابر نے تیرے بغیر
    وقت بارش اخگر خورشید تف پر ڈالہ تھا
    مومن
  • جیسے بارش سے دھلے صحنِ گلستاں امجد
    آنکھ جب خشک ہوئی اور بھی چہرا چمکا
    امجد اسلام امجد
  • آبِ نیساں سے آبننا ہے زمیں پر بھی ہووے گا
    بہاراں کی بارش سے سیپو میں موتی،بنسلوچن
    سورداس
  • مٹا سکی نہ انھیں روز و شب کی بارش بھی
    دلوں پہ نقش جو رنگِ حنا کے رکھے تھے
    امجد اسلام امجد
First Previous
1 2 3 4 5 6
Next Last
Page 1 of 6

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter