• مہر جب حسن دل افروز صنم کا چمکا
    مثل خورشید دیا ذرے کو چمکا چمکا
    سحر (نواب علی)
  • منھ پر لیے نقاب تو اے ماہ کیا چھپے
    آشوب شہر حسن ترا افتاب ہے
    میر تقی میر
  • نظر آتی ہیں یہ جو پتلیاں چشم پری دو میں
    یہ شاید حسن کے دوبٹے رکھے ہیں ترازو میں
    ظفر علی خاں
  • تمہارا لاؤ بالی بن تمہارا حسن ہے گویا
    پری کیونکر کہین تم کو جو تم میں آدمیت ہو
    مرزا صابر
  • کب نیاز عشق ناز حسن سے کھینچے ہے ہاتھ
    آخر آخر میر سر برآستاں مارا گیا
    میر
  • تجھ شاہ خوباں کے ہوئے کئی صاحب اکرام رام
    تجھ حسن کے دیوان سوں پائے ہیں کئی حکام کام
    ولی
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 81

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter