• دل خستہ جو لہو ہوگیا‘ تو بھلا ہوا کہ کہاں تلک
    کبھو‘ سوز سینہ سے داغ تھا‘ کبھو درد و غم سے فگار تھا
    میر تقی میر
  • ہوا ہے فرق درد ہجر میں کچھ بعد مرنے کے
    ہمیں تعویذ مدفن ہو گیا تعوید بازو کا
    مرزا انس
  • شہ بولے کلیجے کا مرے درد وہ جانے
    جس کا کہ پسر قتل ہو اکبر کے برابر
    دبیر
  • ہم درد کا گانا ہے تمن بزم منے راگ
    پیو نیہہ کے کھونٹے بنا ہے میرا جیا تلخ
    قلی قطبشاہ
  • کہوں کس سے غم درد نہانی
    نہیں اس درد کا مجھ پاس چارا
    میر
  • حالتِ جنگ ہی میں رہتا ہے
    جب سے دل درد کی سپاہ میں ہے
    امجداسلام امجد
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 65

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter