• مجھ پہ کیا کیا ظلم ہیں اوبے وفا اب کیا کہوں
    آپھنسے کی بات ہے اس کے سوا اب کیا کہوں
    شوق قدوائی
  • کیا سنبھلے جس پہ ظلم کا یوں آسماں گرے
    دل تھام کر زمیں پہ امام زماں گرے
    انیس
  • کیا ظلم تھا جو آپ کے اوپر روار ہا
    تعریف سے ہے ذکر ہر اک لب پہ آپ کا
    قہر عشق
  • نان جو بھیجی تو میدا ظلم کا مت رکھ روا
    حشر میں ظالم کا آئینہ ہے دوزخ کا توا
    شاکر ناجی
  • صفت ظلم میں یکسان ہے ستمگر کم وبہیں
    آب رکھتی ہے بسان دم شمشیر چھری
    رشک
  • سو اس کو ظلم ستی مل کے شامی بدذات
    کیے شہید ہزاروں جفا ستی ہیہات
    کرم علی
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 16

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter