• اس چرخ سیہ رونے اک فتنے کو سنکارا
    اس ظلم رسیدہ کو کن سختیوں سے مارا
    میر
  • بھول کر دل تجھے اب دیں گے نہ ہم اے سفاک
    رنج و غم جور و جفا ظلم و ستم یاد ہیں سب
    امانت
  • یہ ظلم بے نہایت دیکھو تو خوبر ویاں!
    کہتے ہیں جو ستم ہے ہم تجھ ہی پر کریں گے
    میر تقی میر
  • خدایا داد لے ہور داد لے اس ظالماں کن تھے
    کہ جدنیں سو یتیماں پر جفا ہور ظلم دھایا ہے
    قلی قطب شاہ
  • یہ ظلم ہے تو ہم بھی اس زندگی سے گزرے
    سوگند ہے تمہیں اب جو درگزر کرو تم
    میر
  • ظلم ہے‘ قہر ہے‘ قیامت ہے
    غُصے میں اُس کے زیر لب کی بات
    میر تقی میر
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 16

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter