• باندھے ہے عشق کے کوپ سوں اب کھنوٹ میں دعویکانت
    پرچھم پرم چاواں ہلے سہتے سکیا نمیں مہتری
    قلی قطب شاہ
  • جو چاہے روشنی دل تو داغ عشق اٹھا
    کہ گھر وہ تیرہ ہے جس میں کہ تابدان نہیں
    قائم
  • گو ضبط کرتے ہوویں جراحت جگر کے زخم
    روتا نہیں ہے کھول کے دل راز دار عشق
    میر تقی میر
  • یہ عشق وہ ہے کہ پتھر کو دم میں آب کرے
    لگائے دل وہی جس کو خدا خراب کرے
    امانت
  • دیکھ سینے میں پڑ نہ جائے لکیر
    ہے یہ صہبائے عشق تند اور تیز
    گل نغمہ
  • عشق کے گلشن کے پھولاں میں تمام
    جوت ونتا نمیں جیوں نرگس ہوں میں
    غواصی
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 163

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter