• عشق سے میرے ہوئی آب کی اتنی توقیر
    آج گرتے ہیں خریدار خریداروں پر
    راقم
  • کام تھے عشق میں بہت پر میر
    ہم ہی فارغ ہوئے شتابی سے
    میر تقی میر
  • وفا کیسی کہاں کا عشق جب سر پھوڑنا ٹھہرا
    تو پھر ااے سنگ دل تیرا ہی سنگ آستاں کیوں ہو
    غالب
  • تمھاری عشق میں جوں موسیٰ گگن لگ انپڑیا
    اس چھجے پر چڑھیا ہوں بھی منجھے ہے بام عبث
    قلی قطب شاہ
  • چھوٹ کر عشق کے پھندے سے کدھر جائے گا
    گھرنیاں چاہ زنخداں میں مرے کھائے گا
    میر ظہور علی
  • کھو ہی رہا نہ جان کو ناآزمودہ کار
    ہوتا نہ میر کاش طلب گار عشق کا
    میر تقی میر
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 163

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter