• وہ اک دُود ماں کا تھا روشن چراغ
    جلاتے تھے سارے اسی پر دماغ
    میر
  • اسے ماں نے جو دیکھا ماہ تاباں
    ہوئی سو جاں سے تب اس پہ قرباں
    فگار
  • صبر کی سل غم اولاد میں دل پر دھر لوں
    کیسے ماں ہو کے بھلا چھاتی کو پتھر کرلوں
    شمیم
  • ہر یکشنبہ کوں آؤ کر کیا سب صلاح دے بھیجنا
    جو آویں گے تو آؤ ماں دکھا کیاں بندھانا کیا عرض
    ہاشمی
  • اناتمنا سوں کیا کوں ماں مجھے کہتے شرم آئی
    چھے مہینے کے بھتر پیروکوں پاڑی آس کاٹی نے
    ہاشمی
  • چلائی ماں خدا کے حوالے کیا تمہیں
    پیارو علی کی حفظ و اماں میں دیا تمہیں
    مونس
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 14

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter