• رات بھی‘ نیند بھی‘ کہانی بھی
    ہائے کیا چیز ہے جوانی بھی
    فراق
  • نہ تھی نیند شہ رات کو دھاک تے
    چھٹی آج اس بھشٹ ناپاک تے
    قطب مشتری
  • نہ آوے نیند ہمسایاں کوں مرے چلانے تھے
    گلا یو آہ بھرنے تھے ہوا ہے چلچلا یارب
    غواصی
  • کس کس ادا سے ناک چڑھاتا ہے دیکھیو
    بیکل ہو ٹک جو نیند میں گردن اکڑ گئی
    انشا
  • کچھ رَت جگے سے جاگتی آنکھوں میں رہ گئے
    زنجیرِ انتظار کا تھا سلسلہ‘ وہ نیند
    امجد اسلام امجد
  • سب کو محو خواب راحت چھوڑ کر
    نیند آتی ہے شبستان میں مرے
    ابن انشا
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 16

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter