• آشفتنگی سے اُس کی اُسے بے وفا نہ جان
    عادت کی بات اور ہے دل کا برا نہیں
    امجد اسلام امجد
  • اے چشم چند اشک بہا دے کہ پھر مجھے
    راہِ وفا میں زادِ سفر کی تلاش ہے
    غافل کرنالی
  • ہوا ہے بند اور شعلہ وفا کا
    بہت ہی تیز جلنا چاہتا ہے
    امجد اسلام امجد
  • آگے بھی تیرے عشق سے کھینچے تھے درد و رنج
    لیکن کسو کے پاس متاع وفا نہ تھی
    میر تقی میر
  • عین محبت میں ہیں مِلاتے باہم جب دو چار آنکھیں
    ہوتی ہیں باہم مہر و وفا سے دو آنکھوں کی چار آنکھیں
    ظفر
  • جفا کرتے ہیں وہ جس دم وفا کہتی ہے یہ مجھ سے
    گرے تم میری نظروں سے اگر آنسو ذرا نکلے
    ریاض البحر
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 43

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter