Shair

شعر

رنج اچھے تو غم نہ کر بعد خزاں بہار ہے
غم کی اندھاری سوں نہ ڈر آب پچھیں بہار ہے

(ولی)

سدا رکھتا ہوں شوق اس کے سخن کا
ہمیشہ تشنہ آب بقا ہوں

(ولی)

موے کو جیو نخشے آب حیواں بے گماں ہے جیوں
نین میں تیونج پانی ہے سوتے دل کے جگانے کا

(ولی)

صدق ہے آب ورنگ گلشن دیں
پاکبازی ہے شمع راہ یقیں

(ولی)

یہ مرا رونا کہ تیری ہے ہنسی
آپ بس نئیں پر بسی ہے پربسی

(ولی)

مجمر نمن ہوا ہے بدن سوز ہجر سوں
اسپند کی مثال ہے آتش سواد دل

(ولی)

First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 204

Poetry

Pinterest Share