Shair

شعر

انجھو کاجل لے ٹپکے سوسنے پر دیکھ بھابی کیں
ہوہ کے جوہری کیں تے لے پنی ہار نیلم کا

(ہاشمی)

سوسوروپے تو یک کو یک لگتا تھا ساقی تھے تویاں
وو گئے تو سب کسوٹ اتا ہوئی روٹی ساری آٹ پر

(ہاشمی)

کتے کو چپ کتی ہوں میں ولے یوں جی میں گھٹ گئی ہوں
نزیک ہوہاسمی کے مل میں آٹھوں پھار بیٹھوں گی

(ہاشمی)

انجھو کاجل لے ٹپکے سوسنے پر دیکھ بھابی کیں
ارہ کے جوہری کیں تے لے پہنی ہار نیلم کا

(ہاشمی)

پالک کی بھاجی باجری میریچ خاطر لاؤ ڈھونڈ
دیو سب کو چاول گوش گھیوں گھیو ساگ میتھی سوۓ کا

(ہاشمی)

برہ کی آگ لا پانی اپس کے دل کے لہو کا کر
کدھاں لگ یونچ اونٹانا دونوں انکھیاں کے بھاچڑ میں

(ہاشمی)

First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 74

Poetry

Pinterest Share