• آنکھیں جو دم نزع ہوئیں بند کھلے کان
    آواز سنائی پڑی یاران وطن کی
    اشک
  • آنکھیں جو روتے روتے جاتی رہیں بجاہے
    انصاف کرکہ دیکھے کوئی ستم کہاں تک
    میر
  • تھیں یوں ہی قتل عام پر آنکھیں تلی ہوئی
    دل آنکھ اور سرمہ دنبالہ دار نے
    مسرور
  • یوں نہیں کرتے اشارے سامنے بیمار کے
    مارڈالا نرگس شہلا کو آنکھیں مار کے
    سحر (امان علی)
  • شب وصل صنم میں کیا ہے رونے کا محل اشرف
    ان آنکھیں پونچھ ڈالو ہجر میں رویا کیے برسوں
    اشرف
  • زیب دیتی ہیں حو ارباب نظر کو آنکھیں
    دیدہ دیزی سے وہ ملتی ہیں بشر کو آنکھیں
    برجیس
First Previous
1 2 3 4 5 6 7 8 9 10
Next Last
Page 1 of 61

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter