• چاہت بتوں کی ہے کہ خدائی کا روگ ہے
    آزاد دیر عشق کے آزار سے ہوا
    رشک
  • نام اُلفت کا نہ لوں گا جب تلک ہے دم میں دم
    تو نے چاہت کا مزا اے فتنہ گر دکھلادیا
    مومن
  • اے بیت مقدس تری عظمت کے دن آئے
    اے چشمہ زمزم تری چاہت کے دن آئے
    انیس
  • آنکھ چاہت کی ظفر کوئی بھلا چھپتی ہے
    اس سے شرماتے تھے ہم‘ ہم سے وہ شرماتا تھا
    بہار شاہ ظفر
  • ضبط تھا جب تئیں چاہت نہ ہوئی تھی ظاہر
    اشک نے بہ کے مرے چہرے پہ طوفان کیا
    میر تقی میر
  • سُنی سنائی بات نہیں‘ یہ اپنے اوپر بیتی ہے
    پھول نکلتے ہیں شعلوں سے چاہت آگ لگائے تو
    عندلیب شادانی
First Previous
1 2 3 4
Next Last
Page 1 of 4

Android app on Google Play
iOS app on iTunes
googleplus  twitter